صدمے سے دل کی بیماری لاحق ہو سکتی ہے

ہفتہ, 09 اپریل 2016 11:17
ایک طبی تحقیق کے مطابق کسی بھی شخص کو صدمہ پہنچنے سے اُس کی موت بھی واقع ہو سکتی ہے۔ تحقیق کے مطابق کسی بھی شخص کی شریکِ حیات یا قریبی رشتے دار کی اچانک موت ہونے سے اُس میں دل کی دھڑکن بےقاعدہ ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے اور ایک سال تک دل کی دھڑکن بے قاعدہ رہنے سے دل کام کرنا بند کر سکتا ہے۔ طبی اصلاح میں اس مرض کو ایٹریئل فِبریلیشن کہا جاتا ہے۔ جس میں اکثر اوقات دل کی دھڑکن خطرناک حد تک بے قابو ہو جاتی ہے اور یہ جان لیوا بھی ثابت ہو سکتی ہے۔ محققین کا کہنا ہے کہ ایسے افراد جو ایٹریئل فِبریلیشن کے مرض میں مبتلا ہوتے ہیں اُنھیں سٹروک ہونے کا خدشہ بڑھ جاتا ہے۔ یہ تحقیق اُن افراد پر کی گئی ہے جن کی اہلیہ یا شوہر اچانک مر گئے۔ مشاہدے کے مطابق سانحے کے پہلے مہینے کے اندر ان کے ایٹریئل فِبریلیشن کے مرض میں مبتلا ہونے کی شرح 41 فیصد تک بڑھ جاتی ہے۔ کسی بھی صدمے کے بعد پہلے ہفتے میں بیماری میں مبتلا ہونے امکان 90 فیصد تک بڑھ جاتا ہے لیکن وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ایٹریئل فِبریلیشن میں مبتلا ہونے کا خطرہ کم ہو جاتا ہے۔ اگرچہ ایٹریئل فِبریلیشن کے مرض میں مبتلا ہونے کے بعد سٹروک ہونے اور دل کے ناکارہ ہونے کی شرح بڑھ جاتی ہے لیکن یہ مرض قابلِ علاج ہے۔ محقیق کا کہنا ہے کہ اگر کسی کو بھی اچانک اپنے دل کی دھڑکن میں تبدیلی محسوس ہو تو اُسے نظرانداز نہیں کرنا چاہیے۔ دل کی بےقاعدہ دھڑکن محسوس ہونے پر ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے۔ دل میں درد محسوس ہونے اور دل کا دورہ پڑنے کی علامات جیسے سینے، ہاتھ اور جبڑے میں تکلیف اور سانس تیز ہونے کی کیفیت میں ایمبولینس بلوائیں اور جب تک ایمبولینس نہیں آتی تو اسپرین کی گولی لینی چاہیے۔ محققین کا کہنا ہے کہ یہ تحقیق مشاہدے کی بنیاد پر کی گئی ہے اس لیے ایٹریئل فِبریلیشن کے مرض میں خاندانی ہسٹری اور رہن سہن کو بھی نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ تحقیق کے مطابق شریکِ حیات کے انتقال کے بعد اہلیہ یا شوہر کی صحت خراب ہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے کیونکہ یہ اُن کی زندگی کا پریشان کن لمحہ ہوتا ہے۔
Read 244 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Pakistanviews.org

pakistanviews.org stands as a website enlightening the masses with all information related to current affair, entertainment, sports, technology, etc. It has been brought into existence to ensure that voice of Pakistan reaches the masses. Ensuring that a true picture of Pakistan is portrayed in the right manner to the world. The website is to bring forth the real picture of Pakistan negating avenues of Terrorism and Non-State Acto