عدالت نے ماحولیاتی قوانین پر عمل درآمد کی یقین دہانی پر ساہیوال کول پاور پراجیکٹ مکمل کرنے کی اجازت دے دی

پیر, 25 جنوری 2016 19:40

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کی طرف سے ماحولیاتی قوانین پر عمل درآمد کی یقین دہانی کے بعد ساہیوال میں کوئلے سے چلنے والے بجلی گھر کی تعمیر کے خلاف دائردرخواست نمٹا دی جبکہ عدالت نے ساہیوال کول منصوبے کے خلاف احتجاج کرنے والے شہریوں کے خلاف درج مقدمات کے خلاف دائر درخواست پر حکومت پنجاب سے جواب طلب کر لیا۔جسٹس عابد عزیز شیخ نے کیس کی سماعت کی۔

درخواست گزار کے وکیل شیراز ذکاءنے عدالت کو بتایا کہ پنجاب پاکستان کا زرخیز ترین صوبہ ہے ملک میں وافر پانی موجود ہونے کے باوجود ہائیڈرو انرجی کے منصوبے بنانے کی بجائے کوئلے سے چلنے والے منصوبے لگا کر زرعی اراضی کو تباہ کر رہی ہے۔کول پراجیکٹ کی مشینری چین سے منگوا کر صرف چین کو مالی فوائد دئیے جارہے ہیں اور کک بیکس حاصل کئے جا رہے ہیں۔ساہیوال کے علاقے میں کول منصوبے سے فضائی اور زمینی آلودگی میں اضافہ ہو گا جس سے نہ صرف فصلیں اور زراعت تباہ ہو کر رہ جائے گی بلکہ ارد گرد کی زرخیز زمین بنجر ہو جائے گی۔فضا میں کاربن ڈائی آکسائیڈ اور سلفر آکسائیڈ جیسی مہلک گیسوں کی مقدار بڑھ جانے سے سانس ، کینسر ،آنکھوں کی بیماریاں اور دیگر موذی امراض میں اضافہ ہو گا۔حکومت پنجاب کی جانب سے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے عدالت کو یقین دہانی کرائی کہ منصوبے کی تکمیل میں ماحولیاتی قوانین کو مد نظر رکھا جائے گا۔جس پر عدالت نے کول منصوبے کے خلاف دائر درخواست نمٹا دی۔عدالت نے ساہیوال کول منصوبے کے خلاف احتجاج کرنے والے شہریوں کے خلاف درج مقدمات کے خلاف دائر درخواست پر حکومت پنجاب سے 13مارچ کو جواب طلب کر لیاہے۔

Read 450 times

Leave a comment

Make sure you enter the (*) required information where indicated. HTML code is not allowed.

Pakistanviews.org

pakistanviews.org stands as a website enlightening the masses with all information related to current affair, entertainment, sports, technology, etc. It has been brought into existence to ensure that voice of Pakistan reaches the masses. Ensuring that a true picture of Pakistan is portrayed in the right manner to the world. The website is to bring forth the real picture of Pakistan negating avenues of Terrorism and Non-State Acto